افغا ن طالبان نے ترکی اجلاس میں شرکت کا فیصلہ ابھی نہیں کیا طالبان ترجمان ڈاکٹر محمد نعیم

طالبان کا کہنا ہے کہ انھوں نے ابھی تک فیصلہ نہیں کیا ہے کہ رواں ماہ ترکی میں افغان امن سے متعلق اجلاس میں شرکت کریں گے یا نہیں !!!!
افغانستان کے بارے میں استنبول کانفرنس ،
جو کہ اقوام متحدہ کے زیر اہتمام امریکہ کی تجویز پر منعقد کی جاری ہے ، اس میں طالبان اور افغان حکومت کے نمائندوں کے علاوہ خطے کے متعدد ممالک کی شرکت بھی توقع ہے۔
افغانستان میں امن عمل کے لئے امریکہ کے خصوصی نمائندے ، زلمے خلیل زاد نے مختلف فریقین کو سمٹ میں شرکت کی دعوت دی ہے ۔
قطر میں طالبان کے سیاسی دفتر کے
ترجمان ڈاکٹر محمد نعیم نے بتایا کہ انہوں نے ابھی تک اس کانفرنس میں شرکت کا فیصلہ نہیں کیا ہے اور وہ دوحہ معاہدے پر عمل درآمد کے لئے پرعزم ہیں۔
انہوں نے طالبان اور امریکہ کے مابین طے پانے والے معاہدے پر عمل درآمد کا مطالبہ بھی کیا ہے اور اس بات پر زور دیا ہے کہ غیر ملکی فوجیں ایک خاص تاریخ تک افغانستان سے چلی جائیں۔
طالبان کی ترکی میں سربراہی اجلاس میں شرکت سے ہچکچاہٹ ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب دوحہ معاہدوں کے تحت امریکی اور نیٹو افواج کا انخلاء قریب آ چکا ہے ، لیکن امریکہ کا اصرار ہے کہ لاجسٹک اور تکنیکی مسائل کی وجہ سے وہ پہلے اپنی افواج کو واپس نہیں کر سکتا۔
طالبان نے متنبہ کیا ہے کہ اگر غیر ملکی افواج ایک مقررہ تاریخ تک افغانستان سے نہ گئیں تو ، ان کے خلاف جنگ شروع ہو جائے گی ، جس کے نتائج کا ذمہ دار امریکہ ہو گا ۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں