حکومت کا ڈرامائی پلان

-تحریک لبیک کو بلا وجہ اشتعال دلانے کے لئے اچانک انکے قائد علامہ سعد رضوی کو سڑک سے اٹھا لیا گیا، جبکہ ان پر کوئی مقدمہ نہیں تھا
-جب نہتے کارکن احتجاج ریکارڈ کروانے سڑکوں پر آئے تو ان پر پہلے سے تیار پولیس اور رینجرز نے براہ راست حملہ کردیا۔ شدید شیلنگ اور ریاست کی تاریخ میں پہلی بار اپنی عوام پر سیدھی گولیاں چلائی گئیں
-گولیاں لگنے سے بھگدڑ ہوئی، افراتفری ہوئی، عوام نے فائرنگ رکوانے کے لئے پولیس پر پتھراؤ کیا
۔نتیجہ یہ کہ انارکی پھیل گئی
-اس دوران میڈیا یکترفہ اور جھوٹی خبریں چلاتا رہا
-اور صرف ایک دن کے دھرنے کا حکومتی ردِ عمل یہ آیا کہ تحریک پر پابندی لگا دو۔

یہ حکومتی فیصلہ پہلے سے طے شدہ تھا۔۔

تحریک لبیک کی بڑھتی سیاسی مقبولیت سے قادیانی، لبرلز، اور مغربی ممالک پریشان تھے اور مقتدر اداروں پر دباؤ تھا۔
بریلوی سنیوں پر سیاست کا دروازہ بند کیا گیا ہے جسکو تحریک لبیک پاکستان نے کھولنے کی کوشش کی۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں