وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کی پریس کانفرنس

قبضہ مافیا کیخلاف بلا امتیاز کریک ڈاؤن، پنجاب میں 450 ارب روپے کی ایک لاکھ 55 ہزار ایکڑ اراضی واگزار
پنجاب میں قبضہ مافیا کیخلاف تاریخ کا سب بڑا آپریشن، سرکاری اراضی کا ایک ایک انچ واگزار کرائیں گے:عثمان بزدار
7 روز میں 31اضلاع میں 22 ارب 32کروڑ روپے کی 12 ہزار 318 ایکڑ اراضی واگزار، 403 ایف آئی آر درج، 97 افراد گرفتار
واگزار اراضی کو عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں کے لئے استعمال میں لایا جائے گا،قابض افرادسے تاوان بھی وصول کیا جائے گا
قبضہ مافیا کیخلاف کارروائی کسی جماعت یا مخصوص شخص کے خلاف کارروائی نہیں، یہ آپریشن بلا تفریق ہو رہا ہے اور ہوتا رہے گا
خواہ میرا کوئی رشتے دار ہو یا پارٹی عہدیدار سب کے خلاف بلا امتیاز کارروائی ہو گی،سیاست سے بالا تر ہو کر ایک بڑے مقصد کی خاطر قبضہ مافیا کے خلاف سرگرم عمل ہیں
پرائیویٹ ٹرانسپورٹ پر کوئی پابندی نہیں، مقصدلوگوں کو جیل میں ڈالنا نہیں بلکہ عوام کو آگاہی دینا ہے کہ وہ ما سک پہنیں
جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے حوالے سے پھیلائی جانے والی خبریں قطعا غلط ہیں،مخالفین اس حوالے سے غلط خبریں پھیلا رہے ہیں
نادان دوست کہتے ہیں کہ پنجاب کو ریورس گیئر لگ گیااور ان کو ترقی نظر نہیں آتی،1997 ء کے بعد پہلی بار صوبے میں 12 نئے ہسپتال بن رہے ہیں
13 سپیشل اکنامک زونز پر کام جاری ہے، ہر ضلع میں یونیورسٹی اورہر ضلع کا علیحدہ ڈویلپمنٹ پیکیج بن رہا ہے، 7 ارب روپے کا تاریخی رمضان پیکیج
لاہور31مارچ : وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پنجاب میں قبضہ مافیا کے خلاف بلا امتیاز کارروائی جاری ہے اور قبضہ مافیا سے ایک ایک انچ سرکاری اراضی واگزار کرانے تک آپریشن جاری رہے گا-اب تک صوبہ بھر میں جاری آپریشن کے دوران غیر قانونی قابضین سے ایک لاکھ 55 ہزار ایکڑ اراضی واگزار کرائی گئی ہے جس کی مالیت 450 ارب روپے بنتی ہے – پنجاب میں قبضہ مافیا کے خلاف تاریخ کا سب بڑا آپریشن کیا جا رہا ہے اور اس آپریشن کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا- گزشتہ 7 روز کے دوران31اضلاع میں غیر قانونی قابض افراد سے 22 ارب 32کروڑ70 لاکھ روپے مالیت کی 12 ہزار 318 ایکڑ اراضی واگزار کرائی گئی ہے اور قبضہ مافیا کے خلاف 403 ایف آئی آر درج کی گئی ہیں اور 97 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے – وہ آج وزیر اعلی آفس میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے- معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، انسپکٹر جنرل پولیس، پرنسپل سیکرٹری وزیر اعلی، سیکرٹری اطلاعات اور ڈی جی پی آر بھی اس موقع پر موجود تھیں – وزیر اعلی نے بتایا کہ صوبے میں قبضہ مافیا کے ساتھ شوگر مافیا اور مہنگائی مافیا کے خلاف بھی بلا امتیاز کارروائی کی جا رہی ہے – وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں تحریک انصاف کی حکومت ہر قسم کے مافیا کے خلاف سرگرم عمل ہے اور عوام کے مفادات کے تحفظ کو یقینی بنایا جا رہا ہے – جن شہروں میں قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی کر کے قیمتی سرکاری اراضی واگزار کرائی گئی ہے ان میں سرگودھا، شیخوپورہ، راولپنڈی، راجن پو ر، ڈیرہ غازی خان، ملتان، نارووال اور دیگر شہر شامل ہیں – وزیر اعلی عثمان بزدار نے بتایا کہ واگزار کرائی گئی سرکاری اراضی کو عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں کے لئے استعمال میں لایا جائے گا-جن با اثر افراد نے سرکاری اراضی پر قبضہ کر کے استعمال کیا ہے ان سے تاوان بھی وصول کیا جائے گا- انہوں نے کہا کہ قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی کسی جماعت یا مخصوص شخص کے خلاف کارروائی نہیں بلکہ یہ آپریشن بلا تفریق ہو رہا ہے اور ہوتا رہے گا- سرکاری اراضی پر قبضہ کر کے ذاتی استعمال میں لانا قطعی طور پر نا قابل برداشت ہے- وزیر اعلی نے واضح کیا کہ قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی میں کسی
قسم کا سیاسی امتیاز نہیں برتا جا رہا اور نہ ہی کسی کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے – ہم صرف سرکاری زمین کا تحفظ چاہتے ہیں – قابضین کی سیاسی وابستگی سے ہمیں کوئی سروکار نہیں -واگزار کرائی گئی اراضی کے بہترین مصرف کے لئے حکمت عملی طے کر لی گئی ہے اور واگزار کرائی گئی اراضی کا بورڈ آف ریونیو میں ڈیٹا بینک بنے گا اور ایسے اقدامات کئے جائیں گے کہ دوبارہ کوئی زمین پر قبضہ نہ کرسکے- ایک ہفتے میں 31 اضلا ع میں قبضہ مافیا کے خلاف جاری کارروائی کے خاطر خواہ نتائج سامنے آرہے ہیں اور یہ آپریشن سرکاری زمینوں کا ایک ایک انچ واگزار کرانے تک جاری رہے گا – پاکستان تحریک انصاف کی حکومت مہنگائی مافیا ہو یا کوئی اور ہر مافیا کے خلاف جنگ کا آغاز کر چکی ہے – ہم قبضہ مافیا کی وجہ سے سرکاری خزانے کو پہنچنے والے نقصان کا ازالہ بھی کریں گے -وزیر اعلی عثمان بزدار نے میڈیا کے سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ سرکاری زمین پر قبضے میں سرکاری ملازم کے ملوث ہونے پر اینٹی کرپشن کارروائی عمل میں لاتا ہے-ہم نے بغیر کسی سیاسی وابستگی کے قبضہ مافیا کے خلاف ایکشن شروع کیا ہے، اس میں خواہ میرا کوئی رشتے دار ہو یا ہماری پارٹی کا عہدیدار سب کے خلاف بلا امتیاز کارروائی ہو گی- ہم سیاست سے بالا تر ہو کر ایک بڑے مقصد کی خاطر قبضہ مافیا کے خلاف سرگرم عمل ہیں اور یہ کریک ڈاؤن جاری رہے گا- وزیر اعلی عثمان بزدار نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پرائیویٹ ٹرانسپورٹ پر کوئی پابندی نہیں تا ہم پبلک ٹرانسپورٹ پر پابندی لگائی گئی ہے تا کہ کورونا کا پھیلاؤ کم کیا جا سکے- کورونا کے خلاف پہلے بھی جنگ لڑی ہے اور اب بھی موثر حکمت عملی کے تحت اقدامات کئے ہیں -انہوں نے کہا کہ ہم نہیں چاہتے کہ مکمل لاک ڈاؤن کرنا پڑے لیکن پھیلاؤ کو ہر صورت روکنا ہے-ہم نے کاروبار بند نہیں کئے بلکہ بازاروں اور مارکیٹوں کے اوقات کو کم کیا ہے – ہم چاہتے ہیں کہ بزنس بھی چلے اور کورونا کا پھیلاؤ بھی کم ہو – وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ ہمارا مقصدلوگوں کو پکڑ کر جیل میں ڈالنا نہیں بلکہ عوام کو آگاہی دینا ہے کہ ماسک پہننے سے وہ خود بھی بچیں گے اور ان کے پیارے بھی محفوظ رہیں گے – ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے کورونا ویکسین کی سپلائی مل رہی ہے تا ہم پنجاب حکومت نے خود کورونا ویکسین خریدنے کے لئے کمیٹی بنا دی ہے وہ اس بارے میں حتمی سفارشات پیش کرے گی-ایک اور سوال کے جواب میں وزیر اعلی نے کہا کہ رمضان بازاروں میں کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد کرایا جائے گا جبکہ نماز تراویح کے حوالے سے این سی او سی کے ساتھ مشاورت کے ساتھ مشترکہ فیصلہ کیا جائے گا-وزیر اعلی عثمان بزدار نے کابینہ میں ردوبدل کے بارے پوچھے گئے سوال پر کہا کہ بہتری کی گنجائش ہر وقت موجود ہوتی ہے اور ہم وزراء کی پرفارمنس کا باقاعدہ جائزہ لیتے ہیں – وزیر اعلی عثمان بزدار نے واضح کیا کہ جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے حوالے سے پھیلائی جانے والی خبریں قطعا غلط ہیں – جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ ہمارے ایجنڈے میں شامل ہے اور ہماری حکومت نے جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ قائم کیا ہے -مخالفین اس حوالے سے غلط خبریں پھیلا رہے ہیں – جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے حوالے سے آج بھی میٹنگ ہو رہی ہے – وزیر اعلی عثمان بزدار نے اضلاع کے دوروں کے حوالے سے بتایا کہ مجھے پتا نہیں کس کی طبیعت میرے دوروں کی وجہ سے ٹھیک ہے یا نہیں تا ہم مجھے اتنا معلوم ہے کہ اب ترقی کا نیا دور شروع ہو چکا ہے اور پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار ہر ضلع کا علیحدہ ترقیاتی پیکیج بن رہا ہے اور ہر ضلع میں جا کر عوامی نمائندوں کی مشاورت سے نئے ترقیاتی منصوبے تشکیل دے رہے ہیں اور اس ڈویلپمنٹ پیکیج کو آئندہ بجٹ کا حصہ بنائیں گے – پسند نا پسند کی بجائے ڈسٹرکٹ کا جو حصہ بنتا ہے وہ اسے دیا جائیگا -کوئی شہر اب ترقی سے محروم نہیں رہے گا-ہر ڈسٹرکٹ کو اس کا پورا حصہ دیں گے – وزیر اعلی عثمان بزدار نے بتایا کہ نادان دوست کہتے ہیں کہ پنجاب کو ریورس گیئر لگ گیااور ان نادان دوستوں کو پنجاب کی ترقی نظر نہیں آتی-اب تک پنجاب میں 450 ارب روپے مالیت کی سرکاری اراضی واگزار کرائی جا چکی ہے -13 سپیشل اکنامک زونز پر کام جاری ہے – 1997 ء کے بعد پہلی بار صوبے میں 12 نئے ہسپتال بن رہے ہیں – ہر ضلع میں یونیورسٹی کے قیام کا پلان بنایا ہے -ہر ضلع کا علیحدہ ڈویلپمنٹ پیکیج بن رہا ہے – 7 ارب روپے کا تاریخی رمضان پیکیج صوبے کے عوام کو دیا ہے – 313 سہولت بازار قائم کئے جا رہے ہیں –

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں