پاکستان کا ہر سرکاری ادارہ خسارے می

ملک قرضوں کے جال میں پھنسا ہوا،
عوام ہر چیز پر ٹیکس ادا کر رہی ہے۔
یہ صورتحال 40 سال سے قائم و موجود ہے ۔
موجودہ حکومت ابتک عوام کو ریلیف تو کیا سرکاری افسران و نوکر شاہی کی عیاشیاں ہی ختم نہیں کر سکی۔ ملک خسارے سے کیسے نکلے گا ۔ تبدیلی کا دلاسہ تھا جو پورا نہ ہوا اور لوگ شدید مہنگائی کے گرداب میں پھنس کر رہ گئے۔

ہر خسارہ عوام پر جبری ٹیکس لگا کر، پیٹرول اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کرکے پورا نہ کیا جائے ۔بلکہ سرکاری عیاشیوں کوختم کیا جائے۔ افسران کو دی گئی مراعات سرکاری خرچ پر ان کی آمدورفت، رہائشگاہیں اور پرٹوکول ختم کیا جائے ۔
کرپشن کا لوٹا ہوا پیسہ شفاف طریقے سے قومی خزانے میں جمع کرایا جائے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں