گناہوں سے مستقل توبہ کیجیے

شيخ الاسلام أحمد بن عبد الحليم ابن تيمية الحراني – رحمه الله – فرماتے ہیں :

⭕ “جو شخص گناہوں کو صرف ماہِ رمضان میں چھوڑنے کا ارادہ رکھتا ہو تو ایسا شخص مطلق توبہ کرنے والوں میں شمار نہیں ہو گا.

⭕ لیکن اگر وہ یہ (رمضان میں گناہوں کو چھوڑنا) ﷲ کی رضا کیلیے، ﷲ کے شعائر کی تعظیم کرتے ہوئے اور ﷲ کی محرمات سے بچنے کی خاطر کرے تو ثواب کا مستحق ضرور ہے.

⭕ مگر اس کا شمار ان توبہ کرنے والوں میں نہیں جن کی مطلق بخشش کر دی جاتی ہے!

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں