‏علی حیدر گیلانی کے اغواء کی کہانی

مئی2012مہمند ایجنسی کے3قبائلی ملک،وزیراعظم گیلانی سے ملاقات کرتے ہیں۔ مقصد مہمند ایجنسی میں پولیٹکل ایجنٹ لگوانا تھا 25کروڑ میں سودا طے پا جاتا ہے۔ گیلانی4ہفتے کا ٹائم دیتا ہے۔پولیٹکل ایجنٹ کا تقرر گورنر وزیراعظم کی ایڈوائس پہ کرتا تھا

‏گیلانی صاحب نہ صرف رقم پکڑ چکے ہوتے ہیں بلکہ زرداری کو بھی حصہ دے دیا جاتا ہے 12جون2012،گیلانی کو سپریم کورٹ ڈس کوالیفائی کرکے گھر بھیج دیتی ہے قبائلی جنہوں نے25 کروڑ دیئے ہیں،گیلانی سے دوبارہ ملاقات کرتے ہیں اور رقم واپسی یا کام کی گارنٹی مانگتے ہیں

‏گیلانی کہتا ھے پرویز اشرف کو میری منظوری سے وزیراعظم بنایا گیا ہے، میں پارٹی کا وائس چئیرمین ہوں لہذا بے فکر رہیں آپکے بتائے ہوئے بندے کو 1ہفتے کےاندر مہمند ایجنسی کا پولیٹکل ایجنٹ لگادیا جائے گا۔قبائلی ملک وعدہ لیکر چلے گئے۔زرداری نے نہ رقم واپس کی نہ پولیٹکل ایجنٹ لگایا

‏ہفتہ گزرا، گیلانی نے مزید وقت مانگا، ایک مہینہ مزید دے دیا گیا۔مہینے بعد وہ قبائلی گیلانی سے ملے اور بتایا ہم نے اپنا بندہ زرداری سے ڈائریکٹ پولٹیکل ایجنٹ لگوا لیا ہے آپ رقم واپس کردیں۔

گیلانی نے2کروڑ واپس کئے اور کہا بقایا کا بندوبست ہونے پہ دوں گا ‏قبائلیوں نے2کروڑ واپس لیکرمزید3 دن کاٹائم دیااورکہاکہ ہمیں3دن میں رقم واپس چاہیے۔ہم3دن ملتان میں ہی قیام کرینگے.گیلانی کےخاندان کےلوگ پولیس اور سول افسران ہیں۔آرپی او ملتان نےقبائلیوں کومنشیات اسمگنلگ کیس میں گرفتار کروادیا۔قبائلیوں نےضمانت پہ رہا ہوتےہی گیلانی سےرابطہ کیااور کہا ‏اب ہم30کروڑ واپس لیں گے۔ایک ہفتہ ٹائم دیا لیکن وہ بھی پورا نہ ہوا

9مئی2013کو علی حیدر گیلانی جب الیکشن مہم چلا رہا تھا اغوا کر لیا گیا اور قبائلی علاقہ میں لے گئے۔قبائلی علاقہ سےاسکو افغانستان پہنچا دیا گیا۔افغانستان سےاغوا کار فون کرتے ہیں 30کروڑ ادا کرنے کی حامی بھر لی جاتی ہے ادائیگی کر دی گئی لیکن لاء انفورسمنٹ ایجنسیز سے چھاپہ مروایا گیا جہاں رقم ادا کرنی تھی

ایجنسیز کے ہاتھ علی حیدر گیلانی نہ آیا بلکہ اغوا کاروں نے اسکو25کروڑ کے عوض اگلی پارٹی کو بیچ دیا۔اب گیلانی سے80کروڑ کا مطالبہ کیا گیا۔ گیلانی نے بڑی لعیت و لعل سے 55 کروڑ ادا کئے

‏ایک بڑے مہربان دوست نے بقیہ25 کروڑ دئیے اور سودا طے ہوگیا
رقم ملنے کے بعد اغواکاروں نے علی حیدر گیلانی کو افغانستان میں اس جگہ پہنچایا جہاں افغان سیکورٹی فورسز نے وصول کر کے پاکستانی سیکورٹی فورسز کے حوالے کیا اس طرح 2106 مئی میں 3 سال بعد واپسی ممکن ہوئی.

‏اور آج یہی علی حیدر گیلانی اپنے کرپٹ باپ کو سینیٹ الیکشن میں کامیاب کروانے کے لئے ایک اور گھناؤنے کاروبار میں مرکزی کردار ادا کرتا ھوا پایا گیا۔

چور نا چوری سے گیا اور نا ھی ھیرا پھیری سے

انکی جمہوریت اتنی ھی ھے بس

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں