ضلع رحیم یار خان میں کرونا وائرس کی ایک اور نئی لہر

  • ملک بھر کی طرح رحیم یار خان میں بھی کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد میں بے تحاشا اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔
  • اس وقت ضلع رحیم یار خان میں کرونا وبا کے ہاتھوں سیریس مریضوں کے ہسپتال میں ایڈمشنز میں ریکارڈ اضافہ ہو چکا ہے۔
  • ضلع کے سب سے بڑے شیخ زاید ھسپتال میں کرونا کے مریضوں کے لئے مختص کئے گئے بیڈزتقریبا” فل ہو چکے ہیں۔
  • اس وقت ضلع بھر میں ٹوٹل ایکٹو کیسز کی تعداد میں 35 فیصد کی ریکارڈ مثبت شرح سے بے تحاشہ اضافہ ھوا ہے اور گذشتہ ہفتہ بھر میں اس تعداد میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے۔
  • اس نئی لہر میں ایک دن میں 20، 20 سے ذیادہ سیریس مریض ہسپتال داخل ہو چکے ہیں۔
  • اس موذی مرض کے ہاتھوں لقمہ اجل بننے والوں کی سیکنڈ ویو میں تعداد 100 سے تجاوز کر چکی ہے اور اس میں بہت تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔
  • کرونا وائرس کی اس ابتر صورتحال کو دیکھتے ہوئے ایک دفعہ پھر عوام الناس سے اپیل کرتے ہیں کہ خدا را احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کریں، ہجوم سے بچیں، مناسب فاصلہ رکھیں، بار بار ہاتھوں کو صابن سے دھوئیں، ماسک پہنیں اور ہینڈ سینیٹائزرز وغیرہ کے استعمال کو یقینی بنائیں۔ احتیاط سے ہی کرونا وائرس کو شکست دی جا سکتی ہے۔

، پنجاب حکومت،رحیم یار خان کی ضلعی انتظامیہ اور ہیلتھ انتظامیہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ کرونا ایس۔ او۔ پیز میں سختی کریں اور اس پر حقیقی معنوں میں عملدراد کروایا جائے۔ نیز ہسپتالوں میں او۔ پی۔ ڈی کو کچھ عرصہ کے لئے بند کر کے رش کم کیا جائے کیونکہ یہ کرونا کے پھیلاو کا بہت بڑا سبب ہے۔

  • آخر میں ہم اپنے تمام ڈاکٹرز ، نرسز اور پیرامیڈیکس کو سلام پیش کرتے ہیں جو اپنی اور اپنی فیملیز کی جانوں کی قربانی دے کر بھی اس موذی وباء کے خلاف دن رات ایک کئے ہوئے ہیں۔
    ھم ڈاکٹرز کی کرونا میں بے پناہ خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ ضلع بھر کے ڈاکٹرز سے درخواست کرتے ہیں کہ مریض دیکھتے وقت تمام حفاظتی تدابیر پر سختی سے عمل کریں تاکہ خود بھی اس وبا سے محفوظ رہ سکیں اور اپنے پیاروں کو بھی اس سے بچا سکیں۔

اللہ ہم سب کو اس وبائی مرض سے محفوظ رکھے۔آمین!

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں