دجال کے پیروکار

دجال کے پیروکاروں کی اکثریت یہودی اور عورتیں ہونگی۔ ( مسند احمد، مسند شامیین، حدیث نمبر : 17226)

دوسری حدیث مبارکہ میں ہے کہ”سیدنا عبد اللہ بن عمر ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ سے روایت ہے، فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم نے فرمایا کہ “دجال کی طرف جانے والوں میں اتنی زیادہ تعداد عورتوں کی ہوگی کہ ایک آدمی اپنے رشتہ داروں، ماں، بیٹی ، بہن، پھوپھی وغیرہ کی طرف جا کر ان کو مضبوطی سے باندھ دے گا، تاکہ ایسا نہ ہو کہ ان میں سے کوئی دجال کی طرف چلی جائے” مسندِ احمد، جلد 12، حدیث مبارکہ 12982

آزادی پسند عورتیں جو مذہب اور عورت کے لیے مختص کی گئی مذہب کی چادر اور چاردیواری کو آڑ سمجھتی ہیں اور میرا جسم میری مرضی جو کہ اصل میں ایک دجالی نعرہ ہے اور ان کے کرتوت اسلام کے یکسر الٹ ہیں۔ جس کا واضح مطلب ہے کہ میں آزاد ہوں کچھ بھی کرنے کو جو کہ اسلام میں ہرگز نہیں ہےاسلام عورت کو آزادی بھی دیتا ہے اور مرضی بھی لیکن اسلام کے حدودوقیود اور حیاء کے دائرے میں رہتے ہوئے جبکہ دجال کے چیلوں کا مقصد ہی میرا جسم میری مرضی جیسے جہاں چاہوں استعمال کروں والے ہونگے تب ہی یہ چند بےحیاء عورتوں اللہ اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہِ وسلم سے آزادی مانگ رہی ہیں.

کہا گیا ہے کہ یہ عورتیں دجال کے پیچھے ایسے جائیں گی کہ انکے مرد انکو باندھ کر بھی رکھیں گے تو یہ رسیاں تڑوا کر بھاگیں گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں