سوسال کے روزے کا ثواب

ستّائیسویں   رَجَبُ الْمُرَجَّب کی عظمتوں   کے کیا کہنے  ! اِسی تاریخ میں   ہمارےپیارے پیارے ،    میٹھے میٹھے آقامکّی مدنی مصطفٰےصَلَّی اللہُ تَعَالٰی علیہ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم   کومِعراج شریف کاعظیم الشّان مُعجِز ہ عطا ہوا ۔  ( شَرحُ الزَّرقانی عَلَی المَواہِبِ اللَّدُنِّیۃ ج۸ص۱۸ )  چنانچِہ 27ویں   رَجَب شریف کے روزے کی بڑی فضیلت ہے  ۔  جیسا کہ حضرت ِسیِّدُناسلمان فارسی رضی اللہ تعالٰی عنہ سے مروی ہے ،     اللہ عَزَّ وَجَلَّ کے محبوب ،     دانائے غُیُوب،    مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیُوب صَلَّی اللہُ تَعَالٰی علیہ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ ذِیشان ہے

’’رجَب میں ایک دن اور رات ہے جو اُس دن روزہ رکھے اور رات کو قِیام  ( عبادت  ) کرے تو گویا اُس نے سو سال کے روزے رکھے ،
سو برس کی شب بیداری کی اور یہ رَجَب کی ستائیس ( ست ۔ تا ۔ ئیس )  تاریخ ہے ۔ ‘‘ ( شُعَبُ الْاِیْمَان ج۳ص۳۷۴حدیث ۳۸۱۱ )
صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب !
صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

رجب میں پریشانی دور کرنے کی فضیلت:
حضرتِسیِّدُنا عبد اللہ ابنِ زُبیر رضی اللہ تعالٰی عنہ سے روایت ہے: ’’جو ماہِ رجب میں   کسی مسلمان کی پریشانی دورکرے تو اللہ عَزَّوَجَلَّ اُس کو جنت میں   ایک ایسا محل عطا فرمائے گا جو حدِّ نظر تک وسیع ہوگا.
 ( غُنیۃُ الطّالِبین ج۱ ص۳۲۴،    معجمُ السّفر لِلسّلفی ص۴۱۹رقم۱۴۲۱ )  

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں