مارخور آپ کون ہو ؟؟؟؟

ہم وہ ہیں جو پاکستان کی بقاء کے لئے انڈین خفیہ ایجنسی را کے ہیڈ کوارٹر میں فائنل کھیلتے ہیں مطلب جہاں پر را کے سانپوں کی پنیری پنپتی ( تیار ) ہوتی ہے مارخور کی چراہ گاہ ہے ہم وہ ہیں جو سرعام را کے ہیڈ کوارٹر میں گھستے ہیں ، اور تمام راز لے واپس مڑیں تو بے بس بھارتی خفیہ ایجنسیوں پر سکتہ طاری ہو جاتا ہے سوچ میں پڑھ جائیں کہ وہ کون تھے کہاں سے آئے تھے جو دن دہاڑے موت کے منہ سے پاکستان کے کی بقاء چھین کر لے گئے ،

ہم وہی تو ہیں ، جب تم دشمن سے بے خبر اپنے اپنے کام کاج میں مصروف ہوتے ہو تو ہم تمہاری گلی کوچوں میں مختلف روپ دھارے اپنا کام کر چکے ہوتے ہیں

ہاں وہ ہم تھے۔ جب بھارتی ایجنسی را نے پاکستان کو توڑنے کے لئے کلبھوشن اور سینکڑوں ایجنٹوں سمت دیگر خفیہ ایجنسیوں کے نیٹ ورکس کا جال بچھایا تو اس کو نہ صرف ختم کیا بلکہ بیشمار سانپوں کو نگل لیا ، جن کے زہر سے بلوچستان اور کراچی کو توڑ کر پاکستان کے ٹکڑے کرنے والے تھے۔ ہم نے دنیا کے عیش و آرام کو ٹھوکر مار کر تین تین سال تک بلوچستان اور کراچی کی گلیوں میں کچرا چنتے تھے اور کوڑے کرکٹ کے ڈھیر پر تین تین سال تک سوئے کیونکہ ہمیں اپنا وطن اور اس کے لوگوں سے پیار ہے

ہم وہی تو ہیں جنہوں نے پاکستان پر اپنی زندگیاں قربان کی گمنامی کی موت شہید ہوئے لیکن تم کو خبر تک نہ ہونے دی ،
ہاں ! ہم ہی تھے جب پاکستان کو ایٹم بم بنانے کے لئے خفیہ پرزوں کی ضرورت تھی تو ہم وہ پرزے حاصل کرنے واسطے ساری دنیا میں پھیل گئے تھے لیکن وہ خفیہ پارٹس پاکستان کی بقاء کے لئے پاکستان پہنچائے ، بدلے ہمیں ہمارے کئی گمنام شہزادے دنیا کے تاریک راہوں میں گمنامی کی موت شہید کر دئیے گئے ، انکی مائیں کئی کئی سال اپنے گھروں کے دروازوں پر کھڑی انتظار میں چل بسی، لیکن وہ گمنام شہزادے کبھی واپس نہیں ائے ، چند واپس ائے ، کچھ گمنام فائلوں میں چلے گئے ، ان کو ٹاپ سیکرٹ کہہ کر فائلوں کو بند کر دیا گیا۔

وہ ہم تھے جہنوں نے پاکستان کو ایٹمی طاقت بنانے کے لئے پاکستان کے ازلی دشمن بھارت کے ائیر پورٹ کو استعمال کیا تھا۔
کچھ ایٹمی پارٹس کو بھارتی ایئر پورٹ کے ذریعے پاکستان شفٹ کیا گیا۔
بھارتی فوج کے لئے ایک پیغام ہے جہاں پر را کے سانپوں کی پنیری پنپتی ہے وہ جگہیں مارخور کی پسندیدہ چراہ گاہ یے۔

بیٹا ! ہم کون ہیں یہ دشمن کی چیخیں تم کو بتائیں گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں