یہ پروپیگنڈا نیا نہیں بلکہ 1 سال پرانا ہے

ہمارے ذرائع کے مطابق

لیگی اور ڈیزلی چونکہ اب سینٹ چیئرمین کے الیکشن میں اپنی کتے خانی کرواچکے ہیں تو اس کے بعد اب ان کے پاس یہی آپشن بچتی ہے کہ وہ مذہب کے نام پر پروپیگنڈا شروع کردیں- چنانچہ یہی کیا جارہا ہے- کہ عمران خان نے اقوام متحدہ میں مستقل مندوب قادیانی کو تعین کردیا-
سب سے پہلے یہ پروپیگنڈا نیا نہیں بلکہ 1 سال پرانا ہے- اور اس پروپیگنڈے کو شروع کرنے کا باعث فیس بک پر موجود ایک مذہبی شخصیت قاری حنیف ڈار بنا- جس نے 1 سال پہلے یہ سوشہ چھوڑا— لیکن اس بیچارے کو خود نہیں پتہ تھا کہ اصل معاملہ کیا تھا- بعد میں پتہ چل گیا پر اس کے بعد یہ پروپیگنڈا آج پھر پٹواریوں کی جانب سے اٹھایا گیا ہے–
تو اس سلسلے میں بتاتا چلوں کہ یہ 2 شخص ہیں جن میں سے ایک نام نبیل منیر اکرم ہے جبکہ دوسرے کا نام منیر اکرم ہے- نبیل منیر اکرم نامی شخص 2017 تک اقوام متحدہ میں وائس پریذیڈینٹ آف اکنامک اینڈ سوشل کونسل رہا- جبکہ یہ شخص 1993 میں فارن آفس میں ملازم بھرتی ہوتا ہے اور اس کو بھرتی کرنے والا کوئی اور نہیں لیکن نواز شریف ہے- اور ریاست پاکستان کے آیئن کے مطابق کسی مذہب ، رنگ یا نسل سے تعلق رکھنے والے شخص کی جاب پر کوئی پابندی نہیں ہے لہذا مجھے اس پر کوئی اعتراض نہیں ہے–
دوسرا شخص جس کا نام منیر اکرم ہے اس کو 2019 میں عمران خان نے ملیحہ لودھی کو ہٹا کر اقوام متحدہ میں مستقل مندوب بنایا گیا-
اب جو پہلا شخص ہے جس کو نواز شریف نے تعینات کیا اس کا نام نبیل منیر اکرم ہے یہ قادیانی ہے-اور یہ اقوام متحدہ میں مستقل مندوب نہیں ہے-
اور دوسرا شخص جس کا نام منیر اکرم ہے جس کو عمران خان نے تعینات کیا یہ مسلمان ہے-
پٹواری بغض عمران خان میں اس قدر اندھا ہوچکا ہے کہ منیر اکرم (مسلمان) کو نبیل منیر اکرم ( قادیانی) بنا کر پیش کیا جارہا ہے-اور عمران خان پر فتوے لگا رہا ہے اس کی سمپل سی وجہ ہے کہ چیئرمین سینٹ کی شکست برداشت نہیں ہورہی- میں جانتا ہوں یہ لمحات آپ کے لیئے تکلیف دہ ہیں لیکن پھر بھی یہ طریقہ ساڑ نکالنے کا درست نہیں ہے-

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں