پی ڈی ایم میں باهم اختلافات زور پکڑ چکے ہیں

ذرائع کے مطابق

پی ڈی ایم میں باهم اختلافات زور پکڑ چکے ہیں ، ہر محاز پر مات کھانے کے بعد ، انکو سمجھ نہیں آ رہی ،
فائدہ کیا ہوا ، ساری جنگ کا ؟ آصف زرداری مفادات لے گیا ، اب پی ڈی ایم کو بھی الوداع کہنے کے چکر میں ہے ۔
ن ، ش, بھی آمنے سامنے آ چکی ہیں ، حالات مریم اندر ، حمزہ باہر کی ترجمانی کر رهے ھیں ۔

جسکو سمجھ نہیں آ رہا ، وه سمجھ لے ،
اب کسی کو الطاف حسین ، مجیب الرحمٰن ، حسینہ واجد بننے کی اجازت ہر گز نہیں دی جائے گی ۔
پانامہ سے شروع ہونے والے احتساب میں غلطی نواز شریف کو باہر بھیج کر ہوئی ۔
اب مرہم کو لندن جانے دیں ، لاڈلے چور کیجانب سے یہ فرمائش کی جا رہی تھی ۔
اگلے الیکشن تک واپس نہیں آئے گی ،
الیکشن شروع ہونے سے قبل واپس آ کر اپنی الیکشن کمپین چلائے گی ۔
رعایتیں مانگی جا رہی تھیں ، مریم کی ڈس کوالیفکیشن بھی ختم کرنے کو کہا جا رھا تھا ،

موجودہ حکومت کو فوری گرانے کی خواہش تھی ۔ فوجی قیادت کو پیغام بھیجا گیا ، عمران حکومت کے خاتمے کیلئے ہماری مدد کریں ، وہاں سے جواب نا میں آیا ۔
امریکہ ، برادر اسلامی ممالک ، بین الاقوامی طاقتوں سے دباؤ ڈلوایا گیا ، کچھ نہیں ہوا ۔

عمران خان کسی صورت لٹیروں کیساتھ سمجھوتہ نہیں کرنا چاہتے ، اوپر بھی قائل کر چکے ہیں ، چوروں کیساتھ اب مزید سمجھوتہ ، پاکستان کے مستقبل کیساتھ کھیلنا ہو گا ۔
فیصلہ ھو گیا ، مرہم بیرون ملک نہیں جا سکتی ۔
جب اداروں اور اعلیٰ قیادت کا جواب مسلسل نہیں میں آنا شروع ھوا تو ،
پاکستان نا کھپے ،
ہماری زندگیوں کو خطرہ ہے ، پاکستان کیساتھ غداری کی باتیں شروع ہوئیں ۔
اب صحافیوں ، بیورو کریسی ، بیرونی خفیہ طاقتوں اور معاشرے کی چند کالی بھیڑوں کو ساتھ ملا کر ریاست پاکستان پر حملہ کیا جائے گا ،
گالیاں دی جائیں گی

لانگ مارچ ، دھرنے میں تشدد ، فساد ، بد امنی پیدا کرنے کی کوشش کی جاۓ گی ، دھرنے میں لانگ مارچ کا رخ
جی ایچ کیو کی طرف بھی کیا جا سکتا ہے ۔
کیا یہ جانتے ہیں ، کارکنان کے بہروپ میں سے کون کس ملک کی ایجنسی کیلئے کام کر رہا ہے ؟
اگر عوام جی ایچ کیو میں گھس گئی ، تو ؟؟؟
انکو اب لاشیں چاہئے ،
جس کیلئے کافی عرصے سے کوشش جاری ہے ۔
بیرونی طاقتوں کو ساتھ ملا کر ، ملک کو نقصان پہنچانے کی کوئی کوشش کسی قیمت پر برداشت نہیں کی جاۓ گی ۔

مقدمات میں ان کو موت نظر آ رہی ہے ، عدالتیں ، نیب سب ایکٹیو ہیں ۔

جیل کا وقت ہوا چاہتا ہے ،
آپ سزا یافتہ مجرم ہیں ، آپ کو والد کی تیمار داری کیلئے رعایت دی گئی تھی ،
والد آپ کے ،
دھوکہ دے کر فرار ہو چکے ہیں ، پورا خاندان مفرور ہے ،
برطانوی شہریت رکھتا ہے ۔ ۔ ۔

آپ کی جان کو خطرہ ہے ، آپ سیاست کرنے ، لیڈر بازی کرنے کیلئے آزاد نہیں ہوئی تھیں ۔ چلیں ، جیل منتظر ہے ۔
آخر میں ، ریاست ، رياستی اداروں ، افواج ، آعلیٰ عدالتوں کو کھلے عام چیلنج کیا جا رہا ہے ،
گالم گلوچ جاری ہے ،
ملک توڑنے کی باتیں ہیں ۔ ۔
پاکستان خدانخواستہ تر نوالہ نہیں ، نوالہ
جو ایک چور ، سزا یافتہ مجرم کی خواہشات پوری نا کرنے پر چند حامی توڑ لیں گے ،
یہ ملک اللّه کے رازوں میں سے ایک راز ہے ،
جس نے پاک دھرتی سے دشمنی کی ،
اللّه نے اسکا انجام دنیا کو دکھایا ،
پچھلے بیس سالوں میں دنیا بھر کی دشمن ایجنسیز ، طاقتور ترین ممالک بڑے بڑے پلانرز کے روڈ میپس ، سکرپٹ لیکر آئے ، پاکستانی عوام ، افواج اور ہر ادارے نے مل کر ایسی کی تیسی پھیر دی ،
شکر الحمدللہ ،
آج اللّه کے فضل و کرم سے پاکستان خارجی سطح پر کہاں کھڑا ہے ؟
اب اللّه کے حکم سے پاکستان کو پچھاڑا نہیں جا سکتا ،

یہ چند ڈاکو ، چور ، لٹیرے کس کھیت کی مولی ہیں ۔ ۔ ۔
ریاست پاکستان اب ان کے ہاتھوں بلیک میل نہیں ہو گی ۔ ۔ ۔ ہم نے آگے جانا ہے ۔ ۔ ۔
🇵🇰🇵🇰💚🇵🇰🇵🇰💚🇵🇰🇵🇰
معذرت میرے پاس پی ڈی ایم کیلئے کوئی اچھی خبر نہیں ہے

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں