کرپشن انڈیکس کی طرح خوش رہنے والے ممالک میں بھی پاکستان کی تنزلی

ذرائع کے مطابق

عمران خان ایماندار بھی ہے اور غریبوں کا خیال بھی رکھتا ہے
لیکن کرپشن انڈیکس 117 سے 124 چلا گیا اور خوش رہنے والوں کا ملک کی فہرست میں پاکستان 67 نمبر سے 105 نمبر پر چلا گیا کیا کیا یہی تبدیلی جو انی تھی

بہت سے لوگ خوش رہنے والے ممالک میں پاکستان کا 105 نمبر آنے پر اس کو بھارت سے موازنہ کر رہے ہیں
کیوں نہ ہم اپنی خوش رہنے کا موازنہ اپنے پچھلے سالوں سے کریں 2017 میں پاکستان کا نمبر ہر 67 تھا
مہنگائی بے روزگاری لاقانونیت غریبوں کے چھوٹے چھوٹے گھر گرانے غریبوں کا روزگار تباہ کرنے اور ان کی روٹی چھیننے سے ہوتا ہوا 105 نمبر پر پہنچ گیا ہے

انڈیا میں بہت زیادہ غریب لوگ ان پر بہت زیادہ ٹیکس لگائے جاتے ہیں مہنگائی سے لوگ مارے ہوئے ہیں
اس لئے انڈیا خوش رہنی والی قوموں میں 139۔ 140 نمبر پر ہی رہتا ہے

لیکن اب حکومت کی نااہلی اور ناکامی کی وجہ سے ۔ وزیروں کی لوٹ مار نے مزید دو کروڑ لوگ غربت کی سطح سے نیچے چلے گئے مہنگائی نے لوگوں کی خوشیاں چھین لی ہیں

اقوام متحدہ کی 149 ممالک کے اعداد و شمار پر مبنی ’ورلڈ ہیپی نس رپورٹ‘ کے مطابق اِن ملکوں کی درجہ بندی وہاں بسنے والوں لوگوں کی آمدن، صحت مند زندگی، مشکل وقت میں سہارا ملنے کی توقع، فراخدلی، آزادی اور اعتماد جیسے عناصر کی کسوٹی پر پرکھنے کے بعد کی گئی۔

جہاں پر مہنگائی زیادہ ہوگی بیروزگاری عام ہوگی لوگ خودکشیاں کرنے پر مجبور ہوں گے وہاں پر خوشیاں کیسے ہوگی
پاکستان کو خوش رہنے والی قوموں میں صرف دو سال میں 67 نمبر سے 105 نمبر لے جانے پر ہم عمران خان اور ان کو لانے والوں کو مبارکباد پیش کرتے ہیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں