اللہ جسکو چاہے نبی بنا دیتا ہے

مولانا شمس الحق افغانی رحمۃ اللہ سے ایک قادیانی جج نے پوچھا نبوّت کیا چیز ہے افغانی رحمۃ اللہ فرمانے لگے :

نبوت اعلی منصب ہے اللہ جل شانہ جِسے چاہے دے دیتا ہے ۔

قادیانی بولا :

جب اتنا اچھا منصب ہے تو اِسے عام کرنا چاہئے ۔

مولنا شمس الحق افغانی نے 100 روپے کا نوٹ نکال کر فرمایا :

یہ نوٹ کیسا ہے ؟؟

اُسی زمانے میں سو روپے کا نوٹ بڑا نوٹ تھا ، قادیانی بولا :

یہ تو اعلی چیز ہے ۔

مولانا صاحب نے فرمایا :

جب اتنی اعلی چیز ہے ، تو اِسے عام کرنا چاہئے ۔ ایک مُہر میں اپنی طرف سے بناؤنگا اور جعلی نوٹ تیار کرکے عام کرتا رہونگا ۔

قادیانی جج بولا :

یہ کام اگر آپ نے کیا تو آپ مجرم ہونگے اور سزا کے مستحق ہونگے ۔ اِس کام کی اتھارٹی صرف حکومت کے پاس ہے ، کسی اور کے پاس نہیں ۔۔

مولانا شمس الحق افغانی رحمۃ اللہ نے فرمایا :

ٹھیک ہے ۔۔ اب یہ سمجھو کہ نبوت اگرچہ اعلی منصب ہے ، مگر اسکی اتھارٹی صرف اللہ تعالی کے پاس ہے ، جسکو وہ چاہے نبی بنا دیتا ہے ۔۔

اب آپ لوگوں نے اپنا جعلی نبی بنایا ہے ، تو اس لئے آپ لوگ اللہ پاک کے نزدیک مجرم ہیں ۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں