گلگت کے معصوم سنی عوام پر دہشتگردوں کا حملہ

عورتوں اور بچوں سمیت 7 سنی مسلمانوں کو فائرنگ کر کے شہید کر دیا گیا ہے، مسافر گاڑی گلگت سے ہنزہ کی طرف جا رہی تھی
کہ نلتر کے قریب تربیت یافتہ دہشتگردوں نے گھات لگا کر حملہ کر دیا,
جس کے نتیجہ میں 7 افراد بشمول 1 عورت شہید ہو چکے ہیں اور 8 افراد شدید زخمی ہوئے ہیں، میتوں اور زخمیوں کو گلگت سٹی ہاسپٹل منتقل کر دیا گیا ہے…!
حکومت فوری طور پر قاتلوں کا کھوج لگا کر اُن سےآہنی ہاتھوں سے نمٹے۔
اگر اِس دہشت گردی کے پیچھے کسی ملک کا ہاتھ ہے, تو اُس مسلک و مکتب فکر کے بڑوں کو فوری گرفتار کر کے اُن سے سوال کرے کہ اپنی دھرتی پر اغیار کی مدد سےخون کی ہولی کیوں کھیلی جا رہی ہے؟
کیا کسی شخص کا مخالف مکتبِ فکر سے ہونا اِتنا بڑا جُرم ہے. کہ اُس کی سانسیں ہی چھین لی جاٸیں۔
حکومت کا اب تک کا مایوس کر دینے والا ردعمل اور ڈنگ ٹپاٶ پالیسی مظلوم کی آہوں کےساتھ ساتھ اشتعال کا بھی باعث بن رہی ہے۔
مشتعل افرادکی طرف سے ردعمل میں کچھ بھی کیا گیا تو اُس کی ذمہ دار حکومت ہی ہوگی۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں