بنگلہ دیش میں مظاہرے جاری

ذرائع کے مطابق بنگلہ دیش میں مظاہرے جاری ہیں, ہلاکتوں پر سو گ اور یوم دعا منایا گیا, مزید ریلیوں کا اعلان کیا گیا ہے ۔
پولیس کی فائرنگ سے مزید تین افراد جاں بحق اور سینکڑوں زخمی ہوئے، 200 سے زائد کارکنوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے،
تفصیلات کے مطابق
بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے دورہ بنگلہ دیش کے خلاف ہونے والے پر تشدد مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے اور پولیس کی فائرنگ سے مزید تین افراد ہلاک ہو گئے ،
سرکاری حکام کے مطابق اب تک 13 مظاہرین ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے ہیں,
احتجاج کرنے والی تنظیموں کے مطابق, اب تک ان کے17 کار کن ہلاک اور 500 زخمی ہوئے ہیں،

جبکہ 200 سے بھی زیادہ کارکنان کو گرفتار بھی کیا جا چکا ہے ،
مظاہروں کے منتظمین نے پیر 29 مارچ کو ‘یوم دعا‘ اور ‘سوگ‘ کے طور پر منایا تھا,
جبکہ 2 اپریل جمعہ کے روز مزید ریلیاں نکا لنے کا اعلان کیا ہے،
قبل ازیں بنگلہ دیش میں آزادی کی گولڈن جوبلی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا تھا کہ بنگلہ دیش کی جدوجہد آزادی میں شامل ہونے کی وجہ سے انہیں گرفتار کیا گیا اور جیل جانے کا موقع بھی آ گیا تھا۔ مودی کے اس دعوے پر بھارت میں شدید رد عمل ہوا, اور
حزب اختلاف کی جماعتیں نریندر مودی پر جھوٹا دعوی کرنے کا الزام بھی لگا رہی ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں